Follow Us

آج کا دن کیسا رہے گا

تازہ ترین خبریں

آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی سے ڈالر کی پرواز رک گئی

 کراچی:  آئی ایم ایف سے 6 ماہ کے طویل انتظار کے بعد قرض پروگرام کی منظوری کے ساتھ رواں ہفتے ہی چھٹی اور ساتویں قسط کے اجرا سے دو ہفتوں سے جاری ڈالر کی پرواز ایک بار پھر رک گئی ہے جس سے انٹربینک میں ڈالر 221روپے سے نیچے آگیا جبکہ اوپن مارکیٹ میں 222روپے کی سطح پر آگیا. 

انٹربینک مارکیٹ میں  ڈالر 1روپے 79پیسے کی کمی سے 220روپے 12پیسے کی سطح پربند ہوئی جبکہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 8روپے 50پیسے کی کمی سے 222روپے کی سطح پر بند ہوئی۔

ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن کے چئیرمین ملک بوستان نے کہا ہے کہ بھارت بنگلہ دیش اور افغانستان کی کرنسیوں کی قدر ڈالر کے مقابلے میں بالترتیب 80روپے 95روپے اور 90روپے ہے۔

مقامی ایکس چینج کمپنیز نے مشترکہ حکمت عملی کے تحت ڈالر کی قدر کو مرحلہ وار بنیادوں پر 180روپے تک نیچے لانے کا ہدف مقرر کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئی ایم ایف سے قسط کی پاکستان منتقلی کے ساتھ ڈالر کی قدر 210روپے کی سطح پر آجائے گی جسکے بعد دوست ممالک سے تقریبا 30ارب ڈالر کا فنڈ موصول ہونے کے نتیجے میں ڈالر کی قد 200روپے اور بعدازاں 180روپے کی نچلی سطح پر آجائے گی۔